Main Yun To Nahi Hai Ke Muhabbat Main Nahi Tha

میں یوں تو نہیں ہے کہ محبت میں نہیں تھا

میں یوں تو نہیں ہے کہ محبت میں نہیں تھا

البتہ کبھی اتنی مصیبت میں نہیں تھا

اسباب تو پیدا بھی ہوئے تھے مگر اب کے

اس شوخ سے ملنا مری قسمت میں نہیں تھا

طے میں نے کیا دن کا سفر جس کی ہوس میں

دیکھا تو وہی رات کی دعوت میں نہیں تھا

اک لہر تھی غائب تھی جو طوفان‌ ہوا سے

اک لفظ تھا جو خط کی عبارت میں نہیں تھا

کیفیتیں ساری تھیں فقط ہجر تک اس کے

میں سامنے آ کر کسی حالت میں نہیں تھا

کیا رنگ تھے لہرائے تھے جو راہ روی میں

کیا نور تھا جو شمع ہدایت میں نہیں تھا

لغزش ہوئی کچھ مجھ سے بھی طغیان طلب میں

کچھ وہ بھی ظفرؔ اپنی طبیعت میں نہیں تھا

احمد ظفر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1216) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ahmed Zafar, Main Yun To Nahi Hai Ke Muhabbat Main Nahi Tha in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love Urdu Poetry. Also there are 36 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ahmed Zafar.