Tumhe Khayaal Zaat Hai Shaor Zaat Hi Nahi

تمہیں خیال ذات ہے شعور ذات ہی نہیں

تمہیں خیال ذات ہے شعور ذات ہی نہیں

خطا معاف یہ تمہارے بس کی بات ہی نہیں

غزل فضا بھی ڈھونڈتی ہے اپنے خاص رنگ کی

ہمارا مسئلہ فقط قلم دوات ہی نہیں

ہماری ساعتوں کے حصہ دار اور لوگ ہیں

ہمارے سامنے فقط ہماری ذات ہی نہیں

ورق ورق پہ ڈائری میں آنسوؤں کا نم بھی ہے

یہ صرف بارشوں سے بھیگے کاغذات ہی نہیں

کہانیوں کا روپ دے کے ہم جنہیں سنا سکیں

ہماری زندگی میں ایسے واقعات ہی نہیں

کسی کا نام آ گیا تھا یوں ہی درمیان میں

اب اس کا ذکر کیا کریں جب ایسی بات ہی نہیں

اعتبار ساجد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(369) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Aitbar Sajid, Tumhe Khayaal Zaat Hai Shaor Zaat Hi Nahi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 114 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Aitbar Sajid.