Dil Shorida Ki Wehshat Nahi Dekhi Jati

دل شوریدہ کی وحشت نہیں دیکھی جاتی

دل شوریدہ کی وحشت نہیں دیکھی جاتی

روز اک سر پہ قیامت نہیں دیکھی جاتی

اب ان آنکھوں میں وہ اگلی سی ندامت بھی نہیں

اب دل زار کی حالت نہیں دیکھی جاتی

بند کر دے کوئی ماضی کا دریچہ مجھ پر

اب اس آئینے میں صورت نہیں دیکھی جاتی

آپ کی رنجش بے جا ہی بہت ہے مجھ کو

دل پہ ہر تازہ مصیبت نہیں دیکھی جاتی

تو کہانی ہی کے پردے میں بھلی لگتی ہے

زندگی تیری حقیقت نہیں دیکھی جاتی

لفظ اس شوخ کا منہ دیکھ کے رہ جاتے ہیں

لب اظہار کی حسرت نہیں دیکھی جاتی

دشمن جاں ہی سہی ساتھ تو اک عمر کا ہے

دل سے اب درد کی رخصت نہیں دیکھی جاتی

دیکھا جاتا ہے یہاں حوصلۂ قطع سفر

نفس چند کی مہلت نہیں دیکھی جاتی

دیکھیے جب بھی مژہ پر ہے اک آنسو اخترؔ

دیدۂ تر کی رفاقت نہیں دیکھی جاتی

اختر سعید خان

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(540) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Akhtar Saeed Khan, Dil Shorida Ki Wehshat Nahi Dekhi Jati in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 51 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Akhtar Saeed Khan.