Kabhi Zuba Pay Nah Aya Ke Arzoo Kya Hai

کبھی زباں پہ نہ آیا کہ آرزو کیا ہے

کبھی زباں پہ نہ آیا کہ آرزو کیا ہے

غریب دل پہ عجب حسرتوں کا سایا ہے

صبا نے جاگتی آنکھوں کو چوم چوم لیا

نہ جانے آخر شب انتظار کس کا ہے

یہ کس کی جلوہ گری کائنات ہے میری

کہ خاک ہو کے بھی دل شعلۂ تمنا ہے

تری نظر کی بہار آفرینیاں تسلیم

مگر یہ دل میں جو کانٹا سا اک کھٹکتا ہے

جہان فکر و نظر کی اڑا رہی ہے ہنسی

یہ زندگی جو سر رہ گزر تماشا ہے

یہ دشت وہ ہے جہاں راستہ نہیں ملتا

ابھی سے لوٹ چلو گھر ابھی اجالا ہے

یہی رہا ہے بس اک دل کے غم گساروں میں

ٹھہر ٹھہر کے جو آنسو پلک تک آتا ہے

ٹھہر گئے یہ کہاں آ کے روز و شب اخترؔ

کہ آفتاب ہے سر پر مگر اندھیرا ہے

اختر سعید خان

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(492) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Akhtar Saeed Khan, Kabhi Zuba Pay Nah Aya Ke Arzoo Kya Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 51 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Akhtar Saeed Khan.