Sun Raha Hon Be Sada Naghma Jo Main Ba Chasham Tar

سن رہا ہوں بے صدا نغمہ جو میں با چشم تر

سن رہا ہوں بے صدا نغمہ جو میں با چشم تر

چپکے چپکے زندگی ہنستی ہے میرے حال پر

اپنی ساری عمر کھو کر میں نے پایا ہے تمہیں

آؤ میرے غم کے سناٹو مرے نزدیک تر

ایک دل تھا سو ہوا ہے پائمال آرزو

اب نہ کوئی رہنما ہے اور نہ کوئی ہم سفر

ہر قدم پر پوچھتا ہوں پاؤں کے چھالوں سے میں

یہ مری منزل ہے یا باقی ہے میری رہ گزر

کون ہے یہ جو مرے دل میں ہے اب تک محو خواب

ڈھونڈتے ہیں ایک مدت سے جسے شام و سحر

بند ہیں وارفتگان حسن پر سب راستے

تیرے در سے میں اگر اٹھوں تو جاؤں گا کدھر

جل رہا ہے آتش فرقت میں لیکن زندہ ہے

کیوں لیے بیٹھا ہے یہ الزام اخترؔ اپنے سر

اختر سعید خان

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(392) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Akhtar Saeed Khan, Sun Raha Hon Be Sada Naghma Jo Main Ba Chasham Tar in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 51 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Akhtar Saeed Khan.