Tari Jabeen Pay Meri Subah Ka Sitara Hai

تری جبیں پہ مری صبح کا ستارہ ہے

تری جبیں پہ مری صبح کا ستارہ ہے

ترا وجود مری ذات کا اجالا ہے

حریف پرتو مہتاب ہے جمال ترا

کچھ اور لگتا ہے دل کش جو دور ہوتا ہے

مرے یقین کی معصومیت کو مت ٹوکو

مری نگاہ میں ہر نقش اک تماشا ہے

نظر تو آئے کوئی راہ زندگانی کی

تمام عالم امکاں غبار صحرا ہے

نہ آرزو سے کھلا ہے نہ جستجو سے کھلا

یہ حسن راز جو ہر شے میں کار فرما ہے

غم حیات رہا ہے ہمارا گہوارہ

یہ ہم سے پوچھ دل درد آشنا کیا ہے

چراغ لے کے اسے ڈھونڈنے چلا ہوں میں

جو آفتاب کی مانند اک اجالا ہے

جو ہم کو بھول گئے ان کو یاد کیوں کیجے

تمام رات کوئی چپکے چپکے کہتا ہے

کہاں کہاں لئے پھرتی ہے زندگی اب تک

میں اس جگہ ہوں جہاں دھوپ ہے نہ سایہ ہے

اختر سعید خان

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(514) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Akhtar Saeed Khan, Tari Jabeen Pay Meri Subah Ka Sitara Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 51 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Akhtar Saeed Khan.