Yaad Ayen Jo Ayaam Baharaan To Kidhar Jayain

یاد آئیں جو ایام بہاراں تو کدھر جائیں

یاد آئیں جو ایام بہاراں تو کدھر جائیں

یہ تو کوئی چارہ نہیں سر پھوڑ کے مر جائیں

قدموں کے نشاں ہیں نہ کوئی میل کا پتھر

اس راہ سے اب جن کو گزرنا ہے گزر جائیں

رسمیں ہی بدل دی ہیں زمانے نے دلوں کی

کس وضع سے اس بزم میں اے دیدۂ تر جائیں

جاں دینے کے دعوے ہوں کہ پیمان وفا ہو

جی میں تو یہ آتا ہے کہ اب ہم بھی مکر جائیں

ہر موج گلے لگ کے یہ کہتی ہے ٹھہر جاؤ

دریا کا اشارہ ہے کہ ہم پار اتر جائیں

شیشے سے بھی نازک ہیں انہیں چھو کے نہ دیکھو

ایسا نہ ہو آنکھوں کے حسیں خواب بکھر جائیں

تاریک ہوئے جاتے ہیں بڑھتے ہوئے سائے

اخترؔ سے کہو شام ہوئی آپ بھی گھر جائیں

اختر سعید خان

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(435) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Akhtar Saeed Khan, Yaad Ayen Jo Ayaam Baharaan To Kidhar Jayain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 51 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Akhtar Saeed Khan.