Dil Deewana O Andaaz Baibakanah Rakhtay Hain

دل دیوانہ و انداز بیباکانہ رکھتے ہیں

دل دیوانہ و انداز بیباکانہ رکھتے ہیں

گدائے مے کدہ ہیں وضع آزادانہ رکھتے ہیں

مجھے مے خانہ تھراتا ہوا محسوس ہوتا ہے

وہ میرے سامنے شرما کے جب پیمانہ رکھتے ہیں

گھٹائیں بھی تو بہکی جا رہی ہیں ان اداؤں پر

چمن میں جو قدم رکھتے ہیں وہ مستانہ رکھتے ہیں

بظاہر ہم ہیں بلبل کی طرح مشہور ہرجائی

مگر دل میں گداز فطرت پروانہ رکھتے ہیں

جوانی بھی تو اک موج شراب تند و رنگیں ہے

برا کیا ہے اگر ہم مشرب رندانہ رکھتے ہیں

کسی مغرور کے آگے ہمارا سر نہیں جھکتا

فقیری میں بھی اخترؔ غیرت شاہانہ رکھتے ہیں

اختر شیرانی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(245) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Akhtar Sheerani, Dil Deewana O Andaaz Baibakanah Rakhtay Hain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 82 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Akhtar Sheerani.