Ab Chat Pay Koi Chaand Tehelta Hi Nahi Hai

اب چھت پہ کوئی چاند ٹہلتا ہی نہیں ہے

اب چھت پہ کوئی چاند ٹہلتا ہی نہیں ہے

دل میرا مگر پہلو بدلتا ہی نہیں ہے

کب سے میں یہاں بت بنا بیٹھا ہوں سر راہ

بت ہے کہ شوالے سے نکلتا ہی نہیں ہے

سونے کی جگہ روز بدلتا ہوں میں لیکن

وہ خواب کسی طرح بدلتا ہی نہیں ہے

میں کھینچتا رہتا ہوں اسے دل سے شب و روز

وہ تیر مرے دل سے نکلتا ہی نہیں ہے

عالم خورشید

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(508) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Alam Khurshid, Ab Chat Pay Koi Chaand Tehelta Hi Nahi Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 71 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Alam Khurshid.