Hum Nah Is Tooli Main Thay Yaro Nah Is Tooli Main Thay

ہم نہ اس ٹولی میں تھے یارو نہ اس ٹولی میں تھے

ہم نہ اس ٹولی میں تھے یارو نہ اس ٹولی میں تھے

نے کسی کی جیب میں تھے نہ کسی جھولی میں تھے

بندہ پرور صرف نظارے پہ قدغن کس لیے

پھول پھل جو باغ کے تھے آپ کی جھولی میں تھے

آپ کے نعروں میں للکاروں میں کیسے آئیں گے

زمزمے جو ان کہی اک پیار کی بولی میں تھے

پھر کسی کوفے میں تنہا ہے کوئی ابن عقیل

اس کے ساتھی سب کے سب سرکار کی ٹولی میں تھے

اب دھنک کے رنگ بھی ان کو بھلے لگتے نہیں

مست سارے شہر والے خون کی ہولی میں تھے

آل احمد سرور

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(535) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ale Ahmad Suroor, Hum Nah Is Tooli Main Thay Yaro Nah Is Tooli Main Thay in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 61 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ale Ahmad Suroor.