Subha E Dam Hai Yeh Tabiyat Kaise

صبح دم ہے یہ طبیعت کیسی

صبح دم ہے یہ طبیعت کیسی

خیر اداسی سے شکایت کیسی

کیا کوئی خواب ابھی دیکھا تھا

آنکھ ملتی ہے حقیقت کیسی

دل نے اک وصل مسلسل پا کر

تلخ کر لی ہے محبت کیسی

بے دھڑک دل کو دکھایا کیجے

اس عنایت کی اجازت کیسی

یاد آتا ہے خدا پل پل پل

ایسی حالت میں عبادت کیسی

خود سے دو چار ہوا کرتے ہیں

ہم کو فرصت میں فراغت کیسی

دل سے اترا ہوا ہے کیوں دل بھی

ایسی باتوں کی وضاحت کیسی

خود سے منسوب کیا کیا کیا کچھ

شاعری میں ہے سہولت کیسی

اہل دل عقل کے دشمن ٹھہرے

ہم کو اے دوست نصیحت کیسی

زندگی خود میں امرؔ خوش تھی بہت

موت نے کر دی شرارت کیسی

امردیپ سنگھ

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(453) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Amardeep Singh, Subha E Dam Hai Yeh Tabiyat Kaise in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 10 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Amardeep Singh.