Tu Giya Lakin Teri Yadain Yahin Per Reh Gayin

تو گیا لیکن تری یادیں یہاں پر رہ گئیں

تو گیا لیکن تری یادیں یہاں پر رہ گئیں

بعد تیرے بس تری باتیں زباں پر رہ گئیں

پہلے تیری ذات کا پیکر کہیں پر گم ہوا

اور نہ جانے پھر تری یادیں کہاں پر رہ گئیں

آج پھر ایسا ہوا جب سوچ کر تجھ کو اے دوست

آسماں تکتی نگاہیں آسماں پر رہ گئیں

کیا ستم ہے کل تلک جو سامنے آنکھوں کے تھیں

آج وہ سب صورتیں وہم و گماں پر رہ گئیں

داستان زندگی کے حرف کب کے مٹ چکے

کچھ لکیریں سی فقط اب داستاں پر رہ گئیں

وقت آخر چل دیے تنہا سفر کی اور ہم

سب کی سب چیزیں جہاں کی اس جہاں پر رہ گئیں

امردیپ سنگھ

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(777) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Amardeep Singh, Tu Giya Lakin Teri Yadain Yahin Per Reh Gayin in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 10 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Amardeep Singh.