Marey Mazaar Pay A Kar Diye Jalaaye Ga

مرے مزار پہ آ کر دیے جلائے گا

مرے مزار پہ آ کر دیے جلائے گا

وہ میرے بعد مری زندگی میں آئے گا

یہاں کی بات الگ ہے جہان دیگر سے

میں کیسے آؤں گا مجھ کو اگر بلائے گا

مجھے ہنسی بھی مرے حال پر نہیں آتی

وہ خود بھی روئے گا اوروں کو بھی رلائے گا

بچھڑ کے اس کو گئے آج تیسرا دن ہے

اگر وہ آج نہ آیا تو پھر نہ آئے گا

فقیہ شہر کے بارے میری رائے تھی

گناہ گار ہے پتھر نہیں اٹھائے گا

اسی طرح در و دیوار تنگ ہوتے رہے

تو کوئی اپنے لیے گھر نہیں بنائے گا

ہمارے بعد یہ دار و رسن نہیں ہوں گے

ہمارے بعد کوئی سر نہیں اٹھائے گا

انجم خیالی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(696) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Anjum Khayali, Marey Mazaar Pay A Kar Diye Jalaaye Ga in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 18 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Anjum Khayali.