Aaindgan Ki Udasi Mein

آئندگاں کی اداسی میں

جب دنیا میرے دکھ بٹانے آئی

میرے سارے دکھ چرا لیے گئے تھے

بھری بہار میں میرے آنسوؤں کے بیج جلائے گئے ہیں

آج دیر بعد نئی محبت کو منسوخ کر کے

پہلی تنہائی سے لپٹ کر سونا اچھا لگا ہے

آئندگاں کی اداسی لپیٹ کر

ایک پرانی محبت کا پرسا وصول کرتے ہوئے بھی

دل نہیں بھرا

جذبوں کی کتر بیونت اور خالی لفظوں میں دکھوں کے پیوند لگاتے

تھک گیا ہوں

اسی ادھیڑ بن میں

خود کو سینت سینت کر رکھتے ہوئے

اپنے پیرہن میں

ایک خواب تک سستانے کی فرصت نہیں

سو نئے دکھ کمانے کی عجلت میں

تمہارا سواگت ہے دوست!!!

انجم سلیمی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(793) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Anjum Saleemi, Aaindgan Ki Udasi Mein in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 101 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Anjum Saleemi.