Mujhe Bhi Sehni Parre Gi Mukhalfat Apni

مجھے بھی سہنی پڑے گی مخالفت اپنی

مجھے بھی سہنی پڑے گی مخالفت اپنی

جو کھل گئی کبھی مجھ پر منافقت اپنی

میں خود سے مل کے کبھی صاف صاف کہہ دوں گا

مجھے پسند نہیں ہے مداخلت اپنی

میں شرمسار ہوا اپنے آپ سے پھر بھی

قبول کی ہی نہیں میں نے معذرت اپنی

زمانے سے تو مرا کچھ گلہ نہیں بنتا

کہ مجھ سے میرا تعلق تھا معرفت اپنی

خبر نہیں ابھی دنیا کو میرے سانحے کی

سو اپنے آپ سے کرتا ہوں تعزیت اپنی

انجم سلیمی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(304) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Anjum Saleemi, Mujhe Bhi Sehni Parre Gi Mukhalfat Apni in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 101 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Anjum Saleemi.