Zahur Kashaf O Karamaat Mein Para Howa Hon

ظہور کشف و کرامات میں پڑا ہوا ہوں

ظہور کشف و کرامات میں پڑا ہوا ہوں

ابھی میں اپنے حجابات میں پڑا ہوا ہوں

مجھے یقیں ہی نہیں آ رہا کہ یہ میں ہوں

عجب توہم و شبہات میں پڑا ہوا ہوں

گزر رہی ہے مجھے روندتی ہوئی دنیا

قدیم و کہنہ روایات میں پڑا ہوا ہوں

بچاؤ کا کوئی رستہ نہیں بچا مجھ میں

میں اپنے خانۂ شہ مات میں پڑا ہوا ہوں

میں اپنے دل پہ بہت ظلم کرنے والا تھا

سو اب جہان مکافات میں پڑا ہوا ہوں

انجم سلیمی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(262) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Anjum Saleemi, Zahur Kashaf O Karamaat Mein Para Howa Hon in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Hamd, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 101 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Anjum Saleemi.