Kiya Rawish Rakhi Hai Phir App Ne Oroon K Liye

کیا روش رکھی ہے پھر آپ نے اوروں کے لئے

کیا روش رکھی ہے پھر آپ نے اوروں کے لئے

گر یہی طرز ملاقات ہے اپنوں کے لئے

رسم الفت بھی اگر آپ کے آداب میں ہے

تو اٹھا رکھی ہے وہ کون سے وقتوں کے لئے

جان کا روگ بنا لی جو محبت ہم نے

اب وہ سنتے ہیں کہ تفریح ہے لوگوں کے لئے

تیری باتیں یہ ترا حرف تسلی جیسے

سامنے رکھ دے کھلونے کوئی بچوں کے لئے

کبھی عالم تھا کہ ہر خط تھا ترا دیدۂ تر

رہ گئے اب تو یہ اوراق حوالوں کے لئے

میرے چہرے پہ ہو کیوں رنگ شکایت انجمؔ

میرے دامن کا ہر اک تار ہے یاروں کے لئے

انوار انجم

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(533) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Anwar Anjum, Kiya Rawish Rakhi Hai Phir App Ne Oroon K Liye in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 26 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Anwar Anjum.