Arzo Ne Jis Ki Poroon Tak Tha Sehlaya Mujhe

آرزو نے جس کی پوروں تک تھا سہلایا مجھے

آرزو نے جس کی پوروں تک تھا سہلایا مجھے

خاک آخر کر گیا اس چاند کا سایہ مجھے

گھپ اندھیرے میں بھی اس کا جسم تھا چاندی کا شہر

چاند جب نکلا تو وہ سونا نظر آیا مجھے

آنکھ پر تنکوں کی چلمن ہونٹ پر لوہے کا قفل

اے دل بے خانماں کس گھر میں لے آیا مجھے

کس قدر تھا مطمئن میں پیڑ کے سائے تلے

چاندنی مجھ پر چھڑک کر تو نے بہکایا مجھے

میں بساط گل کو ترسا عمر بھر انورؔ سدید

آج پھولوں پر لٹا کر کیوں ہے تڑپایا مجھے

انور سدید

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(512) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Anwar Sadeed, Arzo Ne Jis Ki Poroon Tak Tha Sehlaya Mujhe in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 22 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Anwar Sadeed.