Uss Ki Ana K But Ko Bara Kar K Dekhte

اس کی انا کے بت کو بڑا کر کے دیکھتے

اس کی انا کے بت کو بڑا کر کے دیکھتے

مٹی کے آدمی کو خدا کر کے دیکھتے

مایوسیوں میں یوں ہی تمنا اجاڑ دی

اٹھے ہوئے تھے ہاتھ دعا کر کے دیکھتے

دشمن کی چاپ سن کے نہ خاموش بیٹھتے

جو فرض تم پہ تھا وہ ادا کر کے دیکھتے

بے مہریٔ زمانہ کا شکوہ فضول ہے

نکلے تھے گھر سے گر تو صدا کر کے دیکھتے

اس کے بغیر زندگی کتنی فضول ہے

تصویر اس کی دل سے جدا کر کے دیکھتے

گردن جھکا کے چلنے میں کتنا وقار ہے

اپنی انا سے خود کو رہا کر کے دیکھتے

تازہ ہوا میں اڑنے کی خواہش تھی گر سدیدؔ

تم اپنا جسم وقف فضا کر کے دیکھتے

انور سدید

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(607) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Anwar Sadeed, Uss Ki Ana K But Ko Bara Kar K Dekhte in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 22 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Anwar Sadeed.