Rait Hi Rait Hai

ریت ہی ریت ہے

وہ ریت کا کرہ ہے

میں نے

اس کرے میں

قدم رکھ دیے ہیں

اور اب مجھے

اپنے پاوں

نہیں ملتے!

میرے ہاتھ

رقص کرتے ہیں

مور کے پنکھ کے ساتھ

میں سنتی ہوں

مور کی چیخ کا بلاوا

مگر ریت

میرے پاوں

واپس نہیں کرتی!

میں لب کھولتی ہوں

اور حلق

کرکراہٹ سے

بھر جاتا ہے

کانٹوں بھرے تھوہر کے

قہقہے ہی نہیں رکتے!

عارفہ شہزاد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(415) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Arifa Shahzad, Rait Hi Rait Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 63 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Arifa Shahzad.