Tere Khayal Se Phir Ankh Meri Purnam Hai

ترے خیال سے پھر آنکھ میری پر نم ہے

ترے خیال سے پھر آنکھ میری پر نم ہے

کہ غم زیادہ ہے اور حوصلہ مرا کم ہے

بقا کے واسطے صدیوں سے جنگ جاری ہے

فنا کے شور شرابے سے ناک میں دم ہے

نہیں تو کب کا مکمل میں ہو چکا ہوتا

جسے میں اپنا سمجھتا ہوں اس میں کچھ کم ہے

عجیب دور ہے یہ دور میری مشکل کا

سوال میں ہے نہ کوئی جواب میں دم ہے

میں جس کو ڈھونڈ رہا ہوں کئی زمانوں سے

مجھے ہو علم کہ وہ میری ذات میں ضم ہے

نماز پڑھتا ہوں اور اس کو یاد کرتا ہوں

مرے خیال میں اک پانچواں بھی موسم ہے

ارشد لطیف

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(490) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Arshad Lateef, Tere Khayal Se Phir Ankh Meri Purnam Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 9 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Arshad Lateef.