Tari Rahe Ga Soch Pey Wehshi Ka Bhoot Kiya

طاری رہے گا سوچ پہ وحشت کا بھوت کیا

طاری رہے گا سوچ پہ وحشت کا بھوت کیا

ٹوٹے گا کسی طور یہ شب کا سکوت کیا

پڑتی نہیں ہے آنکھ کے ساحل پہ سرخ دھوپ

کرتا میں آرزوؤں کے لاشے حنوط کیا

تم نے کہا تو زہر بھی پینا پڑا مجھے

اب اس سے بڑھ کے دوں تمہیں سچ کا ثبوت کیا

کیسے کپاس کے لیے گندم کو چھوڑ دوں

مٹتی نہیں ہے بھوک تو کاتوں میں سوت کیا

میری نظر بھی طالب دیدار ہیر ہے

ملنا پڑے گا جسم پہ مجھ کو بھبوت کیا

ارشدؔ ہمارے ہاتھ سے پھسلے گی ایک دن

پہلے بچا سکا کوئی سانسوں کی ہوت کیا

ارشد محمود ارشد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(440) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Arshad Mahmood Arshad, Tari Rahe Ga Soch Pey Wehshi Ka Bhoot Kiya in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 13 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Arshad Mahmood Arshad.