Asad Bidayuni Poetry, Asad Bidayuni Shayari

اسد بدایونی - Asad Bidayuni

اندور

مشہور شاعر اسد بدایونی کی شاعری ۔ نظمیں اور غزلیں

کس نے کوئی سچ لکھا ہے، یہ فقط الزام ہے

اسد بدایونی

مرے لوگ خیمہ ء صبر میں ، مرے شہر گرد _ ملال میں

اسد بدایونی

مجھے نظر سے تجھے شاخ سے گرا بھی گئے

اسد بدایونی

ترا غرور مری عاجزی ہے کتنی دیر

اسد بدایونی

ہم اپنے ہجر میں اپنے وصال میں گُم ہیں

اسد بدایونی

دُعا کا حرف یہاں محترم نہیں ہو گا

اسد بدایونی

مرے آئنے میں نہ دیکھیئے کسی ایسے ویسے ملال کو

اسد بدایونی

نفی _ ذات کے منظر اُتارنے والا

اسد بدایونی

دُکھ ازل سے یہاں رائیگانی کے ہیں

اسد بدایونی

ضرورت کے بھنور حالات کے پانی میں آتے ہیں

اسد بدایونی

مال برگ ہوا کو پتہ ہے یا مجھ کو

اسد بدایونی