Kuch Nahi Hone K Adraak Se Darta Kiyon Hai

کچھ نہیں ہونے کے ادراک سے ڈرتا کیوں ہے

کچھ نہیں ہونے کے ادراک سے ڈرتا کیوں ہے

خاک ہونا ہے تو پھر خاک سے ڈرتا کیوں ہے

جب کسی دست زلیخا سے تعلق ہی نہیں

اپنے دامن کے کسی چاک سے ڈرتا کیوں ہے

ایسے موسم میں تو ہر شاخ پہ پھول آتے ہیں

آخر اس موسم نمناک سے ڈرتا کیوں ہے

کل ستاروں کو بھی خاطر میں نہیں لاتا تھا

آج سیل خس و خاشاک سے ڈرتا کیوں ہے

ریشمی لفظ و بیاں سے سخن آرائی کر

اپنی ادھڑی ہوئی پوشاک سے ڈرتا کیوں ہے

وہ خود اپنے ہی کسی جال میں پھنس جائے گا

حوصلہ رکھ کسی چالاک سے ڈرتا کیوں ہے

یہ تو بس اک روش خاص پہ کرتی ہے سفر

آدمی گردش افلاک سے ڈرتا کیوں ہے

اشفاق حسین

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(501) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ashfaq Hussain, Kuch Nahi Hone K Adraak Se Darta Kiyon Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 74 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ashfaq Hussain.