Seenay Main Sulagtay Hoay Lamhaat Ka Jungl

سینے میں سلگتے ہوئے لمحات کا جنگل

سینے میں سلگتے ہوئے لمحات کا جنگل

کس طرح کٹے تاروں بھری رات کا جنگل

ہاں دست شناسی پہ بڑا ناز تھا اس کو

دیکھا نہ گیا اس سے مرے ہات کا جنگل

امید کا اک پیڑ اگائے نہیں اگتا

خود رو ہے مگر ذہن میں شبہات کا جنگل

دے طاقت پرواز کہ اوپر سے گزر جاؤں

کیوں راہ میں حائل ہے مری ذات کا جنگل

خوابیدہ ہیں اس میں کئی عیار درندے

بہتر ہے کہ جل جائے یہ جذبات کا جنگل

کچھ اور مسائل مری جانب ہوئے مائل

کچھ اور ہرا ہو گیا حالات کا جنگل

تصویر غزل میں سے جھلکتا ہوا اسلمؔ

یہ شہر سخن ہے کہ خرافات کا جنگل

اسلم کولسری

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1620) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Aslam Kolsari, Seenay Main Sulagtay Hoay Lamhaat Ka Jungl in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 26 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Aslam Kolsari.