Dekh K Arzaan Lahu Sukhiye Manzar Khamosh

دیکھ کے ارزاں لہو سرخئ منظر خموش

دیکھ کے ارزاں لہو سرخئ منظر خموش

بازئ جاں پر مری تیغ بھی ششدر خموش

عکس مرا منتشر اور یہ عالم کہ ہے

ایک اک آئینہ چپ ایک اک پتھر خموش

تیغ نفس کو بہت ناز تھا رفتار پر

ہو گئی آخر مرے خوں میں نہا کر خموش

عرصۂ حیرت میں گم آئنہ خانے مرے

خیمۂ مژگاں میں ہیں خواب کے پیکر خموش

خوف سے سب دم بخود فکر سے چہرے اداس

موج ہوا کیوں ہے چپ کیوں ہے سمندر خموش

کوئی علامت تو ہو کوئی نشاں تو ملے

کیوں ہے لہو بے صدا ہو گئے کیوں سر خموش

اسلم محمود

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(399) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Aslam Mahmood, Dekh K Arzaan Lahu Sukhiye Manzar Khamosh in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 21 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Aslam Mahmood.