Main Sach Tu Keh Doon Par Iss Ko Kahin Bura Na Lage

میں سچ تو کہہ دوں پر اس کو کہیں برا نہ لگے

میں سچ تو کہہ دوں پر اس کو کہیں برا نہ لگے

مرے خیال کی یا رب اسے ہوا نہ لگے

عجیب طرز سے اب کے نبھایا الفت کو

وفا جو کی ہے تو اس طرح کہ وفا نہ لگے

درون ذات بسا ہے جہان یادوں کا

وہ دور رہ کے بھی مجھ کو کبھی جدا نہ لگے

کبھی تو کہتا تھا ہر لمحہ تیرے ساتھ ہوں میں

اب ایسے بچھڑا کے اس کا کہیں پتا نہ لگے

طبیب تم کو بھلانے کا کر رہا ہے علاج

مرض ہوا ہے پرانا کوئی دوا نہ لگے

تمہارے واسطے جب جب بڑھایا دست طلب

عجیب بات ہے اس دم دعا دعا نہ لگے

اٹھے نظر سے نہ اس کی فسون پردہ حسن

خطا بھی تجھ سے اگر ہو اسے خطا نہ لگے

یہ تیرا طرز بیاں مشرقوں سا ہے اسریٰؔ

وہ دن نہ آئے کے تجھ کو خدا خدا نہ لگے

اسریٰ رضوی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(362) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Asra Rizvi, Main Sach Tu Keh Doon Par Iss Ko Kahin Bura Na Lage in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 27 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Asra Rizvi.