Khamshi Rengti Hai Raahon Par

خامشی رینگتی ہے راہوں پر

خامشی رینگتی ہے راہوں پر

ایک افسوں بہ دوش خواب لیے

رات رک رک کے سانس لیتی ہے

اپنی ظلمت کا بوجھ اٹھائے ہوئے

مضمحل چاند کی شعاعوں میں

بیتے لمحوں کی یاد رقصاں ہے

جانے کن ماہ و سال کا سایہ

وقت کی آہٹوں پہ لرزاں ہے

ایک یاد اک تصور رفتہ

سینۂ ماہ سے ابھرتا ہے

ہے یہ سرشاریٔ حیات کا رنگ

درد کن منزلوں سے گزرا ہے

ایاز محمود ایاز

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(475) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ayaz Mahmood Ayaz, Khamshi Rengti Hai Raahon Par in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 21 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ayaz Mahmood Ayaz.