Tamam Umar Ka Koi To Humnawa Niklay

تمام عمر کا کوئی تو ہمنوا نکلے

تمام عمر کا کوئی تو ہمنوا نکلے

خوشی نہیں تو کوئی غم ہی دیرپا نکلے

کچھ اس لئے بھی میں اک شخص سے نبھا رہا ہوں

مرے وجود میں جتنی بھی ہے وفا نکلے

میں اس لئے تری بستی کے پاس بیٹھ گیا

مری تلاش میں شاید تری صدا نکلے

ہے تیرگی سو ابھی چاند سے میں کہتا ہوں

کہ اپنے ہاتھ میں لے کر ذرا دیا نکلے

نہ جانے کون سی دنیا میں آ گیا عزمی

کہ جس سے ہاتھ ملائے وہی خدا نکلے

عزم الحسنین عزمی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(817) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Azm Ul Hasnain Azmi, Tamam Umar Ka Koi To Humnawa Niklay in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 8 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Azm Ul Hasnain Azmi.