Pata Nahi Woh Kon Tha

پتہ نہیں وہ کون تھا

پتہ نہیں وہ کون تھا

جو میرے ہاتھ

موگرے کی ڈال پنکھ مور کا تھما کے چل دیا

پتہ نہیں وہ کون تھا

ہوا کے جھونکے کی طرح جو آیا اور گزر گیا

نظر کو رنگ دل کو نکہتوں کے دکھ سے بھر گیا

میں کون ہوں

گزرنے والا کون تھا

یہ پھول پنکھ کیا ہیں کیوں ملے

یہ سوچتے ہی سوچتے تمام رنگ ایک رنگ میں اترتے گئے

۔۔۔۔۔۔سیاہ رنگ

تمام نکہتیں ادھر ادھر بکھر گئیں

۔۔۔۔۔۔۔۔۔خلاؤں میں

یقین ہے۔۔۔۔۔۔ نہیں نہیں گمان ہے

وہ کوئی میرا دشمن قدیم تھا

دکھا کے جو سراب میری پیاس اور بڑھا گیا

میں بے حساب آرزوؤں کا شکار

انتہائے شوق میں فریب اس کا کھا گیا

گمان۔۔۔ نہیں نہیں یقین ہے

وہ کوئی میرا دوست تھا

جو دو گھڑی کے واسطے ہی کیوں نہ ہو

نظر کو رنگ دل کو نکہتوں سے بھر گیا

پتہ نہیں کدھر گیا

میں اس کو ڈھونڈھتا ہوا

تمام کائنات میں

ادھر ادھر بکھر گیا

بشر نواز

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(328) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Bashar Nawaz, Pata Nahi Woh Kon Tha in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 36 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Bashar Nawaz.