Apni Or Kissi Se Kis Din Rah O Rsm O Rifaqat Thi

اپنی اور کسی سے کس دن راہ و رسم و رفاقت تھی

اپنی اور کسی سے کس دن راہ و رسم و رفاقت تھی

آتی جاتی سانس تھی جس کی ساعت سنگت تھی

تجھ کو خیال نہ آیا ورنہ کس دن اتنے گراں تھے ہم

اک دو حرف مروت سوچو کون سی ایسی قیمت تھی

میں بھی اپنی دھن میں رواں تھا وہ بھی اپنے آپ میں گم

بات کی نوبت کیسے آتی کس کو اتنی فرصت تھی

بیت چکے وہ دن وہ زمانے راحت بھری اذیت کے

یاد کسے اب کون بتائے دوری تھی کہ وہ قربت تھی

کوچہ کوچہ پھیلیں باتیں قطع تعلق خاطر کی

اوروں کا تو ذکر ہی کیا دیوار و در کو حیرت تھی

کتنے ہیں جو اب تک پہنچے اپنی ذات کی منزل تک

حرف و بیاں سے بات ہے باہر ایسی کڑی مسافت تھی

گوشہ گیر فقیر تھے ہم تو مسلک عجز و نیاز بشیرؔ

کیوں بے سود کسی سے الجھتے اپنی کس سے عداوت تھی

بشیر احمد بشیر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1043) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Bashir Ahmad Bashir, Apni Or Kissi Se Kis Din Rah O Rsm O Rifaqat Thi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 15 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Bashir Ahmad Bashir.