In Chatakhte Pathroon Per Paon Dharna Dehaan Se

ان چٹختے پتھروں پر پاؤں دھرنا دھیان سے

ان چٹختے پتھروں پر پاؤں دھرنا دھیان سے

ڈھل چکی ہے شام وادی میں اترنا دھیان سے

جامد و ساکت سہی دیوار و در بہرے نہیں

گھر کی تنہائی ہو پھر بھی بات کرنا دھیان سے

کان مت دھرنا کسی آواز پر کیسی بھی ہو

کوئی روکے بھی تو رستے میں ٹھہرنا دھیان سے

دیکھنا سایہ کہیں کوئی تعاقب میں نہ ہو

شہر کی ویران گلیوں سے گزرنا دھیان سے

راہ میں دیکھو کوئی منظر تو رکھنا ذہن میں

پھر کہیں فرصت ملے تو رنگ بھرنا دھیان سے

کتنے سورج تم سے پہلے اس سفر میں جل بجھے

اس جہان تیرہ خاطر پر ابھرنا دھیان سے

وقت کے ساتھ اپنے اندازے غلط نکلے بشیرؔ

کس قدر مشکل ہے پیاروں کا اترنا دھیان سے

بشیر احمد بشیر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(450) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Bashir Ahmad Bashir, In Chatakhte Pathroon Per Paon Dharna Dehaan Se in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 15 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.9 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Bashir Ahmad Bashir.