Qarya Qarya Khaak Urai Kocha Gird Faqir Hue

قریہ قریہ خاک اڑائی کوچہ گرد فقیر ہوئے

قریہ قریہ خاک اڑائی کوچہ گرد فقیر ہوئے

پورب پچھم ڈھونڈا اس کو آخر گوشہ گیر ہوئے

کون ہیں یہ کیا ربط تھا ان سے کیا کہئے کچھ یاد نہیں

یہ چہرے کب دل میں اترے کس لمحے تصویر ہوئے

سو پیرائے ڈھونڈے پھر بھی آج کے دن تک عاجز ہیں

ہائے وہ بات جو کہہ بھی نہ پائے اور دفتر تحریر ہوئے

صدہا گہری سوچ میں ڈوبی صدیاں ہم پر صرف ہوئیں

اک دو برس کی بات نہیں ہم قرنوں میں تعمیر ہوئے

وہ شب وہ شبخون عدو کا کس اسلوب بیان کریں

گھائل کیسے پہروں تڑپے ہم کس طور اسیر ہوئے

کیا میں کیا تو آج بھی دونوں خاک ہیں کل بھی خاک بشیرؔ

جینا ان کا مرنا ان کا جو وجہ خیر کثیر ہوئے

بشیر احمد بشیر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(599) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Bashir Ahmad Bashir, Qarya Qarya Khaak Urai Kocha Gird Faqir Hue in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 15 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Bashir Ahmad Bashir.