Kahan Aanso Ki Yeh Soghat Hogi

کہاں آنسوؤں کی یہ سوغات ہوگی

کہاں آنسوؤں کی یہ سوغات ہوگی

نئے لوگ ہوں گے نئی بات ہوگی

میں ہر حال میں مسکراتا رہوں گا

تمہاری محبت اگر ساتھ ہوگی

چراغوں کو آنکھوں میں محفوظ رکھنا

بڑی دور تک رات ہی رات ہوگی

پریشاں ہو تم بھی پریشاں ہوں میں بھی

چلو مے کدے میں وہیں بات ہوگی

چراغوں کی لو سے ستاروں کی ضو تک

تمہیں میں ملوں گا جہاں رات ہوگی

جہاں وادیوں میں نئے پھول آئے

ہماری تمہاری ملاقات ہوگی

صداؤں کو الفاظ ملنے نہ پائیں

نہ بادل گھریں گے نہ برسات ہوگی

مسافر ہیں ہم بھی مسافر ہو تم بھی

کسی موڑ پر پھر ملاقات ہوگی

بشیر بدر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1690) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Bashir Badr, Kahan Aanso Ki Yeh Soghat Hogi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 75 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Bashir Badr.