Har Chand Mere Haal Se Wo Bekhabar Nahi

ہر چند میرے حال سے وہ بے خبر نہیں

ہر چند میرے حال سے وہ بے خبر نہیں

لیکن وہ بے کلی جو ادھر ہے ادھر نہیں

آواز رفتگاں مجھے لاتی ہے اس طرف

یہ راستہ اگرچہ مری رہ گزر نہیں

چمکی تھی ایک برق سی پھولوں کے آس پاس

پھر کیا ہوا چمن میں مجھے کچھ خبر نہیں

کچھ اور ہو نہ ہو چلو اپنا ہی دل جلے

اتنا بھی اپنی آہ میں لیکن اثر نہیں

آتی نہیں ہے ان سے شناسائی کی مہک

یہ میرے اپنے شہر کے دیوار و در نہیں

باصرؔ جگا دیا ہے تمہیں کس نے آدھی رات

اس دشت میں تو نام و نشان سحر نہیں

باصر سلطان کاظمی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(559) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Basir Sultan Kazmi, Har Chand Mere Haal Se Wo Bekhabar Nahi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 23 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Basir Sultan Kazmi.