Apni Hasti Ka Agar Husn Numaya Ho Jaye

اپنی ہستی کا اگر حسن نمایاں ہو جائے

اپنی ہستی کا اگر حسن نمایاں ہو جائے

آدمی کثرت انوار سے حیراں ہو جائے

تم جو چاہو تو مرے درد کا درماں ہو جائے

ورنہ مشکل ہے کہ مشکل مری آساں ہو جائے

او نمک پاش تجھے اپنی ملاحت کی قسم

بات تو جب ہے کہ ہر زخم نمک داں ہو جائے

دینے والے تجھے دینا ہے تو اتنا دے دے

کہ مجھے شکوۂ کوتاہئ داماں ہو جائے

اس سیہ بخت کی راتیں بھی کوئی راتیں ہیں

خواب راحت بھی جسے خواب پریشاں ہو جائے

سینۂ شبلی و منصور تو پھونکا تو نے

اس طرف بھی کرم اے جنبش داماں ہو جائے

آخری سانس بنے زمزمۂ ہو اپنا

ساز مضراب فنا تار رگ جاں ہو جائے

تو جو اسرار حقیقت کہیں ظاہر کر دے

ابھی بیدمؔ رسن و دار کا ساماں ہو جائے

بیدم شاہ وارثی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(315) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of BEDAM SHAH WARSI, Apni Hasti Ka Agar Husn Numaya Ho Jaye in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 58 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.2 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of BEDAM SHAH WARSI.