Kab Tasawwaur Yaar E Gul Rukhsar Ka Fael E Abas

کب تصور یار گل رخسار کا فعل عبث

کب تصور یار گل رخسار کا فعل عبث

عشق ہے اس گلشن و گل زار کا فعل عبث

نکہت گیسوئے خوباں نے کیا بے قدر اسے

اب ہے سودا نافۂ تاتار کا فعل عبث

رشتۂ الفت رگ جاں میں بتوں کا پڑ گیا

اب بظاہر شغل ہے زنار کا فعل عبث

آرزو مند شہادت عاشق صادق ہوئے

غیر کو ڈر ہے تری تلوار کا فعل عبث

جب دل سنگیں دلاں میں کچھ اثر ہوتا نہیں

گریہ ہے اس دیدۂ خوں بار کا فعل عبث

خواب میں بھی یار کو اس کا خیال آتا نہیں

جاگنا تھا دیدۂ بے دار کا فعل عبث

خالی از حکمت ہوا بہرامؔ کب فعل حکیم

کام کب ہے داور دادار کا فعل عبث

بہرام جی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(2165) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Behraam Ji, Kab Tasawwaur Yaar E Gul Rukhsar Ka Fael E Abas in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 15 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Behraam Ji.