Dartay Hain Chasham O Zulff O Nigah O Ada Se Hum

ڈرتے ہیں چشم و زلف و نگاہ و ادا سے ہم

ڈرتے ہیں چشم و زلف و نگاہ و ادا سے ہم

ہر دم پناہ مانگتے ہیں ہر بلا سے ہم

معشوق جائے حور ملے مے بجائے آب

محشر میں دو سوال کریں گے خدا سے ہم

گر تو کسی بہانے آ جائے وقت نزع

ظالم کریں ہزار بہانے قضا سے ہم

گو حال دل چھپاتے ہیں پر اس کو کیا کریں

آتے ہیں خود بہ خود نظر اک مبتلا سے ہم

ناچار اختیار کیا شیوۂ رقیب

کچھ بے حیائی خوب ہیں گزرے حیا سے ہم

مانگی نہ ہوگی خضر نے یوں عمر جاوداں

کیا اپنی موت مانگتے ہیں التجا سے ہم

دیکھیں تو پہلے کون مٹے اس کی راہ میں

بیٹھے ہیں شرط باندھ کے ہر نقش پا سے ہم

مجبور اپنی شیوۂ شرم و حیا سے تم

ناچار اضطراب دل مبتلا سے ہم

یہ آرزو ہے آنکھ میں سرمہ لگائیں گے

اے داغؔ خاک پائے رسول خدا سے ہم

داغؔ دہلوی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(247) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of DAGH DEHLVI, Dartay Hain Chasham O Zulff O Nigah O Ada Se Hum in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 125 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of DAGH DEHLVI.