Mazay Ishhq Ke Kuch Wohi Jantay Hain

مزے عشق کے کچھ وہی جانتے ہیں

مزے عشق کے کچھ وہی جانتے ہیں

کہ جو موت کو زندگی جانتے ہیں

شب وصل لیں ان کی اتنی بلائیں

کہ ہمدم مرے ہاتھ ہی جانتے ہیں

نہ ہو دل تو کیا لطف آزار و راحت

برابر خوشی ناخوشی جانتے ہیں

جو ہے میرے دل میں انہیں کو خبر ہے

جو میں جانتا ہوں وہی جانتے ہیں

پڑا ہوں سر بزم میں دم چرائے

مگر وہ اسے بے خودی جانتے ہیں

کہاں قدر ہم جنس ہم جنس کو ہے

فرشتوں کو بھی آدمی جانتے ہیں

کہوں حال دل تو کہیں اس سے حاصل

سبھی کو خبر ہے سبھی جانتے ہیں

وہ نادان انجان بھولے ہیں ایسے

کہ سب شیوۂ دشمنی جانتے ہیں

نہیں جانتے اس کا انجام کیا ہے

وہ مرنا میرا دل لگی جانتے ہیں

سمجھتا ہے تو داغؔ کو رند زاہد

مگر رند اس کو ولی جانتے ہیں

داغؔ دہلوی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(301) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of DAGH DEHLVI, Mazay Ishhq Ke Kuch Wohi Jantay Hain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 125 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of DAGH DEHLVI.