Baraye Farookhat, Urdu Nazam By Daniyal Tareer

Baraye Farookhat is a famous Urdu Nazam written by a famous poet, Daniyal Tareer. Baraye Farookhat comes under the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope category of Urdu Nazam. You can read Baraye Farookhat on this page of UrduPoint.

برائے فروخت

دانیال طریر

روح چاہیے تم کو

یا بدن خریدو گے

موت سب سے سستی ہے

سامنے کی شیلفوں میں

رنگ رنگ آنکھیں ہیں

ساتھ نیند رکھی ہے

خواب اس طرف کو ہیں

سب سے آخری صف میں

حسن کی کتابیں ہیں

خیر کے فسانے ہیں

فرسٹ فلور پر سائنس

میگزین فیشن کے

اور علم دولت ہے

آج کی ضرورت ہے

سب سے بیش قیمت ہے

فرش پر جو رکھا ہے

دین ہے تصوف ہے

فلسفہ ہے منطق ہے

باعث تپ دق ہے

ڈسک کاؤنٹر کے پاس

شیش داں میں رکھی ہے

جیسے قیمتی چیزیں

آسماں میں رکھی ہیں

آسمان والا بھی

کیا یہاں پہ ملتا ہے

کیسے بھاؤ بکتا ہے

پہلے خوب چلتا تھا

لوگ لینے آتے تھے

اب خدا نہیں بکتا

جانے کس زمانے سے

اس زماں میں آئے ہو

یہ جہاں نہیں صاحب

تم دکاں میں آئے ہو

دانیال طریر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(2110) ووٹ وصول ہوئے

You can read Baraye Farookhat written by Daniyal Tareer at UrduPoint. Baraye Farookhat is one of the masterpieces written by Daniyal Tareer. You can also find the complete poetry collection of Daniyal Tareer by clicking on the button 'Read Complete Poetry Collection of Daniyal Tareer' above.

Baraye Farookhat is a widely read Urdu Nazam. If you like Baraye Farookhat, you will also like to read other famous Urdu Nazam.

You can also read Love Poetry, If you want to read more poems. We hope you will like the vast collection of poetry at UrduPoint; remember to share it with others.