Bilajawaz Nahi Hai Falak Se Jang Meri

بلا جواز نہیں ہے فلک سے جنگ مری

بلا جواز نہیں ہے فلک سے جنگ مری

اٹک گئی ہے ستارے میں اک پتنگ مری

پھر ایک روز مرے پاس آ کر اس نے کہا

یہ اوڑھنی ذرا قوس قزح سے رنگ مری

جو کائنات کنارے سے جا کے مل جائے

وہی فراغ طلب ہے زمین تنگ مری

میں چیختے ہوئے صحرا میں دور تک بھاگا

نہ جانے ریت کہاں لے گئی امنگ مری

فنا کی سرخ دوپہروں میں رقص جاری تھا

رگیں نچوڑ رہے تھے رباب و چنگ مری

لہو کی بوند گری روشنی کا پھول کھلا

پھر اس کے بعد کوئی اور تھی ترنگ مری

دانیال طریر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(368) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Daniyal Tareer, Bilajawaz Nahi Hai Falak Se Jang Meri in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 56 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Daniyal Tareer.