Tasalsul Se Gumaan Likha Giya Hai

تسلسل سے گماں لکھا گیا ہے

تسلسل سے گماں لکھا گیا ہے

یقیں تو ناگہاں لکھا گیا ہے

مکمل ہو چکی قرأت فضا کی

پرندے اور دھواں لکھا گیا ہے

مرا دو پل ٹھہر کر سانس لینا

سر آب رواں لکھا گیا ہے

اگائے گی ستارے اب یہ مٹی

زمیں پر آسماں لکھا گیا ہے

کتاب غیب پڑھتا جا رہا ہوں

مرا ہونا کہاں لکھا گیا ہے

نہیں لکھا گیا کاغذ پہ کچھ بھی

فقط آئندگاں لکھا گیا ہے

دانیال طریر

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(2440) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Daniyal Tareer, Tasalsul Se Gumaan Likha Giya Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 56 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.3 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Daniyal Tareer.