Meyan E Lala Rukhaan Narm Khou Juda Sa Hai

میانِ لالہ رُخاں، نرم خُو جُدا سا ہے

میانِ لالہ رُخاں، نرم خُو جُدا سا ہے

ہجومِ شعلہ بیاں میں بھی تُو جدا سا ہے

جدا جدا سا جو میں کارواں سے رہتا ہوں

یہ اس لئے ہے کہ میرا لہو جدا سا ہے

خدائے پاک یہ کس نارسائی کا دکھ ہے

خلق کا اب کے یہ ہاؤ ہُو جدا سا ہے

ہر ایک شہر ہے کوفہ و شام سا میرا

ہجومِ نوحہ گراں چار سُو جدا سا ہے

نمازِ عشق ہم آنکھوں سے پڑھتے رہتے ہیں

قیام اس کا الگ ہے، وضو جدا سا ہے

سجا سجا سا جو جاتا ہے جانبِ مقتل

یہ سارے شہر میں اک خوبرو جدا سا ہے

لباسِ دل پہ کئی دوستوں کے تحفے ہیں

اسی لئے تو ہر اک رفو جدا سا ہے

جبینِ وقت پہ دلشاد کیا پڑھا تُو نے

جدا ہے تم سے یہ دنیا کہ تُو جدا سا ہے

دلشاد احمد

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(537) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Dilshad Ahmed, Meyan E Lala Rukhaan Narm Khou Juda Sa Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Birthday Urdu Poetry. Also there are 25 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.8 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Birthday poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Dilshad Ahmed.