Ap Jab Bhi Kabhi Muskurane Lage

آپ جب بھی کبھی مسکرانے لگے

آپ جب بھی کبھی مسکرانے لگے

درد جتنے تھے میرے سہانے لگے

رات پوری کھڑی ہے ابھی صحن میں

تارے مجھ کو ابھی سے جگانے لگے

خواب جلتے ہوئے رکھ دیے راہ پر

بے سہارا تھے وہ سب ٹھکانے لگے

اس قدر جان کو ہو رہا تھا ملال

آپ روٹھے نہیں ہم منانے لگے

اب کے شاید وہ آئے گا اس شہر میں

بام پر ہم دئے تو جلانے لگے

بہہ گیا آنکھ سے میرا کاجل تو پھر

رنج و غم دل کے سب ہی چھپانے لگے

اس قدر مہرباں وہ کہاں مجھ پہ تھے

جس قدر وہ مجھے اب جتانے لگے

دلشاد نسیم

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(811) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Dilshad Naseem, Ap Jab Bhi Kabhi Muskurane Lage in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 18 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Dilshad Naseem.