Paniyoon Ne Yunhi Garoon Main Apne Khawab Zinda Rakhe Hain

پانیوں نے یونہی غاروں میں اپنے خواب زندہ رکھے ہیں ۔۔!

ایک روز میں نے دیکھا ۔۔۔

صبح صادق سے زرا پہلے کا سماں تھا اور وہ لمحہ بڑا طویل تھا

دیکھتی ہوں خود کو ۔۔

لب ساحل حیران سی کھڑی تھی

چٹانوں کی بارگاہ میں سمندر چپ چاپ بیٹھا ہوا تھا

ہوا بھی میری طرح دم بخود رک رک کر چل رہی تھی

لہریں تو جیسے سانس لینا ہی بھول رہیں تھیں

سیپیاں اپنے آنچل پھیلائے خاموش دعا گو ساکت تھیں

سمندر نے بہت ادا سی سے باری باری ہم سب کو دیکھا

اور ۔۔۔۔۔

سر جھکائے آہستہ آہستہ واپس اپنے رستے پر چل پڑا

اچانک

جانے کہاں سے

ایک سرو قد لہر

بڑی بے قراری سے اسے روکنے اس کے آگے آگے دوڑی

سمندر وہیں ٹھہر گیا

محبت سے اس سرو قد لہر کو دیکھا

نم آنکھوں سے

بھیگے لہجے میں بولا

میں جانتا ہوں ۔۔

تم مجھ سے بہت پیار کرتی ہو

یہ بھی جانتا ہوں

کبھی میری خاطر

کبھی مجھے روکنے ساحلوں سے لڑتی ہو

پر ۔۔۔

پگلی مجھے تو چلتے رہنا ہے

دور تلک جانا ہے

خبر گیری ہے منصب میرا ۔۔۔ مجھےآبشاروں سے ملنا ہے

سنو ۔۔۔۔۔ پیاری ۔۔ساتھ چلنے کی ضد نا کرو

تم سے یہ سفر نا ہو سکے گا

تم بس یہیں رکو

لب ساحل میرا انتظار کرو

میری دلدار ۔۔!

میں تمہیں بہت یاد کروں گا

راہ کے ہر پتھر پر تمہیں انتظار لکھوں گا

تم ۔۔ یہاں

سیپیوں کے آنچل میں اپنے آنسو جمع کرتی رہنا

تمہارے خواب صدف بن کر سیپیوں میں رہیں گے

میرے خواب وحی بن کر غاروں میں اتریں گے

میری جان

میرا یقین کرو

پانیوں نے یونہی غاروں میں اپنے خواب زندہ رکھے ہیں

ڈاکٹر نگہت نسیم

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(953) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Dr Nighat Nasim, Paniyoon Ne Yunhi Garoon Main Apne Khawab Zinda Rakhe Hain in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Nazam, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 33 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.7 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Dr Nighat Nasim.