Aik Doje Ki Dawe Dari Hai

ایک دوجے کی دعوے داری ہے

ایک دوجے کی دعوے داری ہے

دھوپ چھاوٴں میں جنگ جاری ہے

بوجھ سانسوں کا ڈھو رہا ہوں مَیں

میرے کاندھوں پہ ذمے داری ہے

جس کو سمجھا مسیحا ہم سب نے

وہ تو سب سے بڑا مداری ہے

ایک سلگتا ہوا سا وہ لمحہ

کتنی صدیوں پہ آج بھاری ہے

رو پڑی موت میری حالت پر

زندگی اِس طرح سے ہاری ہے

دی ہے اُس کے خیال نے دستک

بڑھ گئی دل کی بے قراری ہے

ہر طرف تھا دھواں دھواں منظر

پوچھ مت کیسے شب گزاری ہے

ڈاکٹر آفتاب عرشی

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(421) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Dr. AFTAB ARSHI, Aik Doje Ki Dawe Dari Hai in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope Urdu Poetry. Also there are 15 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.1 out of 5 stars. Read the Love, Sad, Social, Friendship, Bewafa, Heart Broken, Hope poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Dr. AFTAB ARSHI.