Utha Hon Ik Hajhom Tamana Liye Howay

اٹھا ہوں اک ہجوم تمنا لئے ہوئے

اٹھا ہوں اک ہجوم تمنا لئے ہوئے

دنیا سے جا رہا ہوں میں دنیا لئے ہوئے

مدت سے گرچہ جلوہ‌‌ گہ طور سے خموش

آنکھیں ہیں اب بھی ذوق تماشا لئے ہوئے

دنیائے آرزو سے کنارہ تو کر کے دیکھ

دنیا کھڑی ہے دولت دنیا لئے ہوئے

روز ازل سے عشق ہے ناکام آرزو

دل ہے مگر ہجوم تمنا لئے ہوئے

اے کم نگاہ دیدۂ دل سے نگاہ کر

ہر ذرہ ہے حقیقت صحرا لئے ہوئے

ہستی کی صبح کون سی محفل کا ہے مآل

آنکھیں کھلی ہیں حسرت جلوہ لئے ہوئے

دن بھر مری نظر میں ہے وہ یوسف بہار

آتی ہے رات خواب زلیخا لئے ہوئے

دل پھر چلا ہے لے کے ترے آستاں کی سمت

اپنی شکستگی کا سہارا لئے ہوئے

وہ دن کہاں کہ تھی مجھے جینے کی آرزو

پھرتا ہوں اب تو دل کا جنازا لئے ہوئے

احسان دانش

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(1803) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ehsan Danish, Utha Hon Ik Hajhom Tamana Liye Howay in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Social Urdu Poetry. Also there are 66 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.4 out of 5 stars. Read the Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ehsan Danish.