Angan Angan Khana Kharabi Hansti Hae MemaroN Par

آنگن آنگن خانہ خرابی ہنستی ہے معماروں پر

آنگن آنگن خانہ خرابی ہنستی ہے معماروں پر

پتھر کی چھت ڈھال رہے ہیں شیشے کی دیواروں پر

زخم لگے تو بس یہ جانو چوٹ پڑی نقاروں پر

آج لگا دو جان کی بازی ٹوٹ پڑو تلواروں پر

اہل جنوں کی لالہ کاری موسم کی پابند نہیں

فصل خزاں میں پھول کھلے ہیں زنداں کی دیواروں پر

دل کے افق سے ٹوٹ گئے ہیں کتنے سورج کتنے چاند

ٹپکے ہیں دو چار ستارے جب تیرے رخساروں پر

کہتے ہیں خوش قامت کس کو دیکھ نکل کر گلشن سے

کیسے کیسے سرو رعنا چلتے ہیں انگاروں پر

اس ساحل پر ناؤ پڑی ہے اس ساحل پر مانجھی ہے

بیچ ندی میں تیرتی لاشو پل بن جاؤ دھاروں پر

اعزاز افضل

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(595) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ezaz Afzal, Angan Angan Khana Kharabi Hansti Hae MemaroN Par in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 20 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.6 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ezaz Afzal.