Chalo Kuch Tu Raah Tay Ho Na Chlay Tu Bhool Ho Gi

چلو کچھ تو راہ طے ہو نہ چلے تو بھول ہوگی

چلو کچھ تو راہ طے ہو نہ چلے تو بھول ہوگی

ابھی بند ہر گلی ہے جو کھلے گی طول ہوگی

ترے حسن کی ودیعت مری جرأت نظارہ

ترے رو بہ رو جھکے گی تو نظر کی بھول ہوگی

مرے ہم سفر بڑھیں گے مجھے راستہ بتا کر

مرے پاؤں سے اڑی ہے مرے سر پہ دھول ہوگی

مجھے قبلہ رو بٹھا کر مرے ہاتھ اٹھانے والو

یہ یقین بھی دلا دو کہ دعا قبول ہوگی

چلو مان لیں یہ دونوں کوئی شے ہے مصلحت بھی

نہ ستم کا دل دکھے گا نہ وفا ملول ہوگی

ترا فن قصہ گوئی ابھی دار تک ہی پہنچا

مرے شوق کی کہانی ابھی اور طول ہوگی

وہ لہو کی دھار افضلؔ جو ہے قرض خنجروں پر

نہ کریں گے ہم تقاضا نہ کبھی وصول ہوگی

اعزاز افضل

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(408) ووٹ وصول ہوئے

متعلقہ شاعری

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Ezaz Afzal, Chalo Kuch Tu Raah Tay Ho Na Chlay Tu Bhool Ho Gi in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad, Social Urdu Poetry. Also there are 20 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 5 out of 5 stars. Read the Sad, Social poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Ezaz Afzal.