Aaj Yun Mouj Dar Mouj Gham Tham Gaya Is Terhan Gham Zadon Ko Qarar Aa Gaya

آج یوں موج در موج غم تھم گیا اس طرح غم زدوں کو قرار آ گیا

آج یوں موج در موج غم تھم گیا اس طرح غم زدوں کو قرار آ گیا

جیسے خوشبوئے زلف بہار آ گئی جیسے پیغام دیدار یار آ گیا

جس کی دید و طلب وہم سمجھے تھے ہم رو بہ رو پھر سر رہ گزار آ گیا

صبح فردا کو پھر دل ترسنے لگا عمر رفتہ ترا اعتبار آ گیا

رت بدلنے لگی رنگ دل دیکھنا رنگ گلشن سے اب حال کھلتا نہیں

زخم چھلکا کوئی یا کوئی گل کھلا اشک امڈے کہ ابر بہار آ گیا

خون عشاق سے جام بھرنے لگے دل سلگنے لگے داغ جلنے لگے

محفل درد پھر رنگ پر آ گئی پھر شب آرزو پر نکھار آ گیا

سرفروشی کے انداز بدلے گئے دعوت قتل پر مقتل شہر میں

ڈال کر کوئی گردن میں طوق آ گیا لاد کر کوئی کاندھے پہ دار آ گیا

فیضؔ کیا جانیے یار کس آس پر منتظر ہیں کہ لائے گا کوئی خبر

مے کشوں پر ہوا محتسب مہرباں دل فگاروں پہ قاتل کو پیار آ گیا

فیض احمد فیض

© UrduPoint.com

All Rights Reserved

(452) ووٹ وصول ہوئے

Your Thoughts and Comments

Urdu Nazam Poetry of Faiz Ahmed Faiz, Aaj Yun Mouj Dar Mouj Gham Tham Gaya Is Terhan Gham Zadon Ko Qarar Aa Gaya in Urdu. This famous Urdu Shayari is a Ghazal, and the type of this Nazam is Sad Urdu Poetry. Also there are 119 Urdu poetry collection of the poet published on the site. The average rating for this Urdu Shayari by our users is 4.5 out of 5 stars. Read the Sad poetry online by the poet. You can also read Best Urdu Nazam and Top Urdu Ghazal of Faiz Ahmed Faiz.